Vinkmag ad

کیل مہاسوں سے کیسے بچیں

خواتین کو پیش آنے والے مسائل میں سے ایک چہرے خصوصاً ناک پر کیل ہیں۔ اپنی رنگت کی وجہ سے ان کی شناخت قدرے آسان ہوتی ہے۔ یہ جلد پر ہلکے سے ابھرے ہوتے ہیں مگر ان میں درد یا سوجن نہیں ہوتی۔ مگر کیل مہاسوں سے کیسے بچیں؟ اس کے لیے ان ہدایات پر عمل کریں:

٭صبح اٹھنے کے بعد اور رات کو سونے سے پہلے چہرے کو اچھی طرح دھوئیں۔

٭بہت سی خواتین کو لگتا ہے کہ چہرے پر میل جمع ہونے کی وجہ سے ہی کیل مہاسے ہوتے ہیں لہٰذا اگر صابن سے بار بار چہرہ دھویا جائے تو یہ مسئلہ ٹھیک ہو سکتا ہے۔ یہ عمل درست نہیں بلکہ ایسا کرنے سے جلد مزید خراب ہو سکتی ہے۔ کسی بھی چیز کا ضرورت سے زیادہ استعمال اسے نقصان دہ بنا دیتا ہے لہٰذا دن میں دو مرتبہ صابن سے چہرہ دھونا کافی ہے۔

٭رات کو چہرے کی کلینزنگ کر کے سوئیں۔ اس سے چہرے پر تیل کی مقدار معمول کے مطابق رہے گی، مردہ جلد کے خلیے صاف ہوتے رہیں گے اور کیل نہیں بنیں گے۔

٭اگر آپ کی جلد پہلے سے ہی چکنی ہے توایسے لوشن، کریم اور فیس واش کا استعمال کریں جو تیل سے پاک ہوں۔

٭رنگ گورا کرنے والی کریموں کے استعمال سے گریز کریں۔

٭چکنائی کی حامل اشیاء کا استعمال کم کر دیں۔

٭جنک فوڈ کے بہت زیادہ استعمال سے گریز کریں۔

٭خود یا پارلرز میں جاکر کیل نہ نکلوائیں۔ ایسا کرنے سے ممکن ہے کہ چہرے پر کچھ ہی عرصے میں گڑھے بن جائیں۔ ان کے مکمل علاج میں دو سے چار ماہ لگتے ہیں جو ماہرامراض جلد کی مدد سے ہی ممکن ہے۔

ہمارے ہاں اس تناظرمیں گھریلو ٹوٹکوں کا استعمال بھی بہت عام ہے۔ کچھ صورتوں میں یہ فائدہ مند ثابت ہوتے ہیں تاہم زیادہ تر صورتوں میں ان کا نتیجہ خراب ہی نکلتا ہے۔ اس لیے ان پر انحصار نہ کریں۔

Vinkmag ad

Read Previous

آنکھوں سے متعلق دلچسپ معلومات

Read Next

انیمیا کی شکار خواتین کیا کھائیں

Leave a Reply

Most Popular