دوائیں کمزور، جراثیم طاقتور

0

دوائیں کمزور، جراثیم طاقتور

بیکٹیریا اورفنگس بعض اوقات اپنے اندراتنی طاقت پیدا کرلیتے ہیں کہ انہیں ختم کرنے کے لئے استعمال ہونے والی ادویات یعنی اینٹی بائیوٹکس ان پر اثر کرنا چھوڑ دیتی ہیں۔ دوسرے لفظوں میں فرد کے اندر ان ادویات کے خلاف مزاحمت پیدا ہوجاتی ہے۔ اس لئے اگلی دفعہ زیادہ طاقتوردوائوں کی ضرورت پڑتی ہے۔ اگریہ صورت حال اسی طرح برقراررہی تو ماہرین کے مطابق ایسا وقت آ سکتا ہے جب کوئی ایک اینٹی بائیوٹک بھی اثرنہ کرسکے ۔اس مزاحمت کا سبب بنے والے عوامل یہ ہیں

٭اینٹی بائیوٹکس ادویات کا غیرضروری استعمال۔

٭علاج ادھورا چھوڑدینا یا ادویات کا کورس مکمل نہ کرنا۔

٭مویشیوں اورمچھلیوں کی خوراک میں ان ادویات کا استعمال۔

٭ہسپتالوں اورکلینکس میں انفیکشن کو قابو کرنے کا ناقص انتظام۔

٭صحت و صفائی کے اصولوں پر عمل نہ کرنا۔

٭نئی اینٹی بائیوٹکس کی تیاری نہ ہونا۔

بچاؤ کی تدابیر

اس سے بچنے کے لئے ان ہدایات پر عمل کرنا چاہئے

٭اینٹی بائیوٹکس ہمیشہ معالج کے مشورے سےہی استعمال کریں۔

٭ڈاکٹر کے تجویز کردہ نسخے پر مکمل عمل کریں یعنی اگر ہفتے بھر کے لئے ادویات دی ہیں اورآپ تیسرے ہی دن بہتر محسوس کرنے لگے ہیں تو بھی بتائی گئی مدت تک انہیں استعمال کریں۔

٭بہت پرانی بچی ہوئی ادویات استعمال نہ کریں۔

٭اپنی ادویات کسی دوسرے فرد کو استعمال کے لئے نہ دیں۔ ممکن ہے کہ دو لوگ ایک ہی مسئلے کا شکار ہوں مگر اس کی وجوہات مختلف ہوسکتی ہیں۔

٭انفیکشن کی صورت میں اینٹی بائیوٹکس کا استعمال زیادہ ہوتا ہے۔ پرہیز علاج سے بہتر کے اصول پر عمل کرتے ہوئے باقاعدگی سے ہاتھ دھوئیں تاکہ اس سے بچا جا سکے۔ مزید برآں ویکسی نیشن بھی لازماً کروائیں۔ ہسپتال یا گھر میں کسی بھی بیمار شخص کو چھونے سے پہلے دستانے استعمال کریں۔ ضرورت ختم ہونے پرانہیں پھینک دیں اورہاتھ پھر سے دھوئیں۔

Antibiotic resistance, reasons, prevention

0 0 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
Would love your thoughts, please comment.x
()
x