شہد کی حفاظت

0

شہد کی حفاظت

شہد کو چوری ہونے سے بچانے کے لئے ہر چھتے کی مکھیاں خاص قسم کی مہک پیدا کرتی ہیں. اس کی بنا پر وہ ایک دوسرے کو پہچان لیتی ہیں۔ جن حشرات الارض کو چھتے میں داخل ہونے سے روک دیا جاتا ہے‘ وہ اردگرد منڈلاتے رہتے ہیں ۔ اس ماحول میں رہنے سے مخصوص مہک ان میں بھی رچ بس جاتی ہے۔ یوں انہیں بھی چوری چھپے چھتے میں داخل ہونے کا موقع مل جاتاہے۔مگر اندر داخل ہوتے ہی اُنہیں پہچان لیاجاتا ہے۔ اس پر مکھیاں بکھر کر چور کو اپنی گرفت میں لے لیتی ہیں۔ ان میں سے کئی مکھیاں اس کے اردگرد گیند کی شکل میں جمع ہوجاتی ہیں اور اپنے جسم کے تمام پٹھوں کو پوری قوت سے حرکت میں لاتی ہیں ۔اس سے اُن کے جسم کا درجہ حرارت تیزی سے بڑھنے لگتا ہے اور چورکے جسم کا درجہ حرارت 117ڈگری فارن ہائیٹ تک پہنچ جاتا ہے۔ یوں وہ ’پک‘‘ کر مر جاتا ہے اور اسے ڈسنے کی ضرورت نہیں پڑتی۔

honey bee, honey protection, hive

0 0 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
Would love your thoughts, please comment.x
()
x