ٹینشن اور اینگزائٹی سے نپٹنے کے لیے تجاویز

بعض افراد کو مخصوص صورتوں میں ٹینشن یا اینگزائٹی ہوتی ہے جبکہ کچھ مستقلاً ان کا شکار رہتے ہیں۔ دونوں کیفیات کی کچھ علامات ملتی ہیں تاہم ان میں کچھ فرق بھی ہے۔ تناؤ ذہن یا جسم پر ایک بوجھ ہے جس کا دورانیہ کم ہوتا ہے۔ وہ واقعات یا حالات جو مایوسی یا گھبراہٹ کا احساس دلائیں، اس کا سبب بن سکتے ہیں۔ اس کے برعکس اینگزائٹی، خوف اور پریشانی کا احساس ہے۔ یہ ذہنی تناؤ کے رد عمل کے طور پر پیدا ہو سکتا ہے۔ بعض اوقات بغیر کسی وجہ کے بھی ہوتا ہے اور اس کا دورانیہ زیادہ ہوتا ہے۔ ٹینشن اور اینگزائٹی سے نپٹنے کے لیے تجاویز پر عمل کر کے ہم ان سے جڑے دیگر مسائل پر قابو پا سکتے ہیں۔

ٹینشن اور اینگزائٹی سے کیسے نپٹیں

٭آہستہ آہستہ لمبا سانس لیتے ہوئے چار تک گنتی گنیں۔ پھر سانس باہر نکالتے ہوئے بھی اتنی ہی گنتی کریں۔

٭اب آہستہ آہستہ 10 تک گنتی گنیں اور پھر اسی عمل کو دہرائیں۔

٭1-2-3-4-5 کی تکنیک پر عمل کرنے سے بے چینی پیدا کرنے والے خیالات سے توجہ ہٹے گی اور ذہن پر سکون ہوگا۔ اس کے لیے پہلی ارد گرد موجود پانچ چیزوں مثلاً قلم، کتاب یا کسی شخص کو دیکھیں۔ پھر چار چیزوں مثلاً بالوں، کپڑوں یا زمین کو چھوئیں اور ان کی ساخت کو محسوس کریں۔ اس کے بعد تین آوازوں مثلاً چڑیوں کا چہچہانا، قدموں کی آواز یا گفتگو کو غور سے سنیں۔ اب ان دو چیزوں کو یاد کریں جن کی خوشبو ہو مثلاً صابن یا پھول۔ پھر اس خوشبو کو محسوس کریں۔ آخر میں ایک چیز کھائیں اور اس کے ذائقے پر غور کریں۔

٭آئینے کے سامنے کھڑے ہو کر خود سے پوچھیں کہ جس بات پر آپ اتنا زیادہ پریشان ہو رہے ہیں، کیا وہ اتنی اہم ہے بھی یا نہیں۔ اور کیا وہ آپ کے اختیار میں ہے یا نہیں۔ اگر جواب نفی میں ہو تو خود کو سمجھائیں کہ پریشان ہونے کی ضرورت نہیں۔ اگر جواب ہاں میں ہو تو خود کو تسلی دیں کہ آپ حالات کو ٹھیک کرنے کی پوزیشن میں ہیں اور اس کے لیے پوری کوشش کریں گے۔

٭کسی قریبی اور بھروسے کے قابل شخص کو اپنے مسائل بتائیں۔

٭بعض خوشبوئیں(مثلاً قدرتی تیلوں یا پھولوں کی خوشبو) اینگزائٹی دور کرنے میں مدد دینے والے خلیوں کو فعال کرتی ہیں۔ اس لیے ان کی مدد ملیں۔

اینگزائٹی سے بچاؤ

ٹینشن اور اینگزائٹی سے نپٹنے کے لیے تجاویز کے علاوہ ان سے بچاؤ کے لیے بھی کچھ ہدایات ہیں:

٭یوگا یا میڈی ٹیشن کو معمول بنائیں، مساج کروائیں یا ریلیکس ہونے کی تکنیک آزمائیں۔ جب ذہن اور جسم پر سکون ہوگا تو ذہنی تناؤ اور بے چینی خود ختم ہو جائے گی۔

٭بھوک کا بھی نفسیاتی کیفیات سے تعلق ہے لہٰذا کھانا وقت پر کھائیں۔

٭کیفین کی مقدار کم کر دیں۔ الکوحل یا تمباکونوشی سے بھی گریز کریں۔

٭کسی شخص یا حالات سے متعلق منفی خیالات کا غلبہ ہو تو ان کا کوئی مثبت پہلو تلاش کرنے کی کوشش کریں۔

٭ایک ڈائری میں ان تمام عوامل کو لکھیں جو ان کیفیات کا سبب بنتے ہیں تاکہ ان سے بہتر طور پر نپٹنے کے لیے خود کو تیار کر سکیں۔

٭نیند معیاری ہو تو جسم اور ذہن تروتازہ رہتے ہیں۔ اس کے لیے رات کی نیند زیادہ بہتر ہے۔

٭روزانہ کم از کم 10منٹ واک کریں یا اپنی سہولت کے مطابق ورزش کریں۔

٭رضاکارانہ کام میں حصہ لیں۔ اس سے توجہ بٹی رہے گی۔

٭دن میں اپنے لیے کچھ وقت نکالیں۔ اس دوران آرام کریں تاکہ ذہن پر سکون ہو اور چاہیں تو اپنی پسند کی کوئی سرگرمی کر لیں۔

٭ان کیفیات کا سبب کوئی بیماری ہو تو اس کا علاج کروائیں۔ اگر یہ ادویات کے سائیڈ افیکٹس کی وجہ سے ہو تو ڈاکٹر کو آگاہ کریں۔

Vinkmag ad

Read Previous

Obsessive-compulsive disorder

Read Next

سردیوں میں جلد کے مسائل

Leave a Reply

Most Popular