Vinkmag ad

سندھ بجٹ، صحت کے لیے 300 ارب روپے مختص

سندھ اسمبلی میں مالی سال 2024 – 2025 کا بجٹ پیش کر دیا گیا۔ بجٹ میں صحت کے لیے 300 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔ گزشتہ برس اس مد میں 227.8 ارب رکھے گئے تھے۔ یوں اس سال نگہداشت صحت کے بجٹ میں 32 فیصد اضافہ کیا گیا ہے۔ بجٹ وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے پیش کیا۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اضافی فنڈز سے نئے منصوبے شروع کرنے میں مدد ملے گی۔ جے پی ایم سی میں مصنوعی ذہانت کے نظام کا منصوبہ ہے۔ یہ بالکل اسی طرح کا نظام ہے جو جان ہاپکنز ہسپتال اور ہارورڈ میڈیکل سکولز ماس جنرل ہسپتال میں موجود ہے۔ جلد ہی نوری آباد، دادو، شہداد کوٹ اور اسلام کوٹ میں نئے چیسٹ پین یونٹس قائم کیے جائیں گے۔

بجٹ میں میڈیکل ایجوکیشن کے لیے 14 ارب 39 کروڑ روپے رکھے گئے ہیں۔ 14 مختلف اداروں/این جی اوز کے ذریعے مفت ڈائیلیسز پر 235 ملین روپے خرچ کیے جائیں گے۔

سوبھراج ہسپتال کراچی میں 60 بستروں پر مشتمل پیڈیاٹرک یونٹ، اعظم بستی کراچی میں 80 بستروں کا میٹرنٹی اینڈ چائلڈ ہسپتال، کراچی اور لاڑکانہ میں انتہائی نگہداشت کے یونٹس اور میرپورخاص میں چلڈرن ہسپتال قائم کیے جائیں گے۔

گمبٹ انسٹی ٹیوٹ میں کینسر کے علاج کے لیے سیلولر اور جین تھراپی کا منصوبہ ہے۔ گمبٹ میں پاکستان کی پہلی پبلک سیکٹر فارماسیوٹیکل انڈسٹری بھی قائم کی جائے گی۔

حکومت نے بجٹ میں صحت کے لیے 300 ارب روپے رکھنے کو بڑا اقدام قرار دیا ہے۔ تاہم اپوزیشن جماعتوں نے بجٹ میں کراچی کو کم حصہ ملنے پر تنقید بھی کی ہے۔

Vinkmag ad

Read Previous

گوشت کو ہضم کرنے کے لیے مزیدار رائتے اور چٹنیاں

Read Next

گلٹی دار جلدی بیماری کی ویکسین جاری

Leave a Reply

Most Popular