Vinkmag ad

پاکستان کے طویل القامت ترین نوجوان کا 30 سال کی عمر میں انتقال

پاکستان کے طویل القامت ترین نوجوان ضیاء رشید کل 2 جولائی کو 30 سال کی عمر میں انتقال کر گئے۔ وہاڑی سے تعلق رکھنے والے ضیاء کا قد آٹھ فٹ اور تین انچ تھا۔ وہ طویل عرصے سے گھٹنے کی تکلیف میں مبتلا تھے۔

اتفاق سے 26 برس قبل دنیا کے طویل القامت ترین انسان عالم چنا کا انتقال بھی اسی تاریخ کو ہوا تھا۔

ضیاء رشید کو پاکستان کے طویل القامت ترین شخص بننے کا اعزاز 15 سال کی عمر میں حاصل ہوا تھا۔ پانچ سال بعد انہیں گھٹنوں سے متعلق بیماری لاحق ہو گئی۔ تاہم یہ واضح نہیں کہ اس کا تعلق ان کے غیر معمولی طور پر دراز قد ہونے سے تھا یا نہیں۔

گھٹنے کی بیماری کی وجہ سے وہ شدید تکلیف میں مبتلا تھے۔ مالی وسائل کی کمی کے سبب وہ اس کا باقاعدہ  علاج نہ کروا سکے۔ وقت کے ساتھ ساتھ بیماری بڑھتی گئی۔ پچھلے سال وہ سیڑھیوں سے گر گئے جس سے درد مزید بڑھ گیا۔

دسمبر 2018 میں ایک انٹرویو میں انہوں نے بتایا تھا کہ وہ فٹنس اور دفاع کے لیے تائیکو انڈو سیکھ رہے ہیں۔

انہوں نے میٹرک تک تعلیم حاصل کی تھی۔ ان کے بقول وہ تعلیم جاری رکھنا چاہتے تھے لیکن مالی اور سفری مسائل کے سبب ایسا نہ کر سکے۔

مرحوم کے نماز جنازہ میں علاقے کی معروف شخصیات سمیت سینکڑوں افراد نے شرکت کی۔

Vinkmag ad

Read Previous

بواسیر

Read Next

بچے کی پیدائش کے بعد ڈپریشن، معروف اداکارہ ثروت گیلانی کی ویڈیو وائرل

Leave a Reply

Most Popular