Vinkmag ad

بچے کی پیدائش کے بعد ڈپریشن، معروف اداکارہ ثروت گیلانی کی ویڈیو وائرل

بچے کی پیدائش کے بعد ڈپریشن کا سامنا بہت سی خواتین کو کرنا پڑتا ہے۔ اسے پوسٹ پارٹم ڈپریشن کہا جاتا ہے۔ پاکستان کی معروف اداکارہ ثروت گیلانی نے اعتراف کیا ہے کہ وہ بھی اس کیفیت سے گزریں۔ اس وجہ سے ان کا دل بیٹی کو مارنے کو بھی چاہتا تھا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ندا یاسر کے مارننگ شو میں کیا۔ اس کی ویڈیو بہت وائرل ہوئی ہے۔ اس میں انہوں نے نوزائیدہ ماؤں میں ہونے والی طبی پیچیدگیوں اور پوسٹ پارٹم ڈپریشن پر بھی بات کی۔

اپنا تجربہ بیان کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ان کا بڑا آپریشن ہوا تھا۔ پیدائش کے چار دن بعد انہوں نے بیٹی کی شکل دیکھی تھی۔ اس وقت وہ فیڈ کے لیے تڑپ رہی تھی۔ دوسری طرف وہ خود بھی کئی مسائل کی شکار اور درد میں مبتلا تھیں۔ وہ ذہنی تناؤ سے بھی گزر رہی تھیں۔ ایک دفعہ تو دل میں یہ خیال آیا کہ بچی کو نیچے گرا دوں۔ ایسا خوفناک خیال آنے پر وہ زار و قطار رو پڑیں ۔ انہوں نے اپنے شوہر کے ساتھ بھی اپنے احساسات شیئر کیے۔ شوہر نے انہیں بتایا کہ یہ پوسٹ پارٹم ڈپریشن ہے۔ اس میں ایسے خیالات کا آنا معمول کی بات ہے۔

پوسٹ پارٹم ڈپریشن کیا ہے؟

بچے کی پیدائش کے بعد زیادہ تر نئی ماؤں کو  کچھ خاص کیفیات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس میں موڈ میں تبدیلی، رونے کی خواہش پیدا ہونا، بے چینی اور سونے میں دشواری نمایاں ہیں۔ اس موقع پر اداسی کے احساسات کو ”بے بی بلیوز” بھی کہا جاتا ہے۔ یہ ڈیلیوری کے بعد دو سے تین دنوں میں شروع ہو جاتے ہیں اور دو ہفتوں تک جاری رہ سکتے ہیں۔

کچھ نئی ماؤں کو ذہنی دباؤ کی زیادہ شدید اور دیرپا شکل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اسے پوسٹ پارٹم ڈپریشن کہا جاتا ہے۔ بعض اوقات یہ حمل کے دوران شروع ہو جاتا ہے اور زچگی  کے بعد بھی جاری رہتا ہے۔

اس کی ایک انتہائی شدید کیفیت بھی ہے۔ اسے پوسٹ پارٹم سائیکوسس کہتے ہیں جو زچگی کے بعد ہو سکتا ہے۔ تاہم ایسا شاذو نادر ہی ہوتا ہے۔

 

Vinkmag ad

Read Previous

پاکستان کے طویل القامت ترین نوجوان کا 30 سال کی عمر میں انتقال

Read Next

غزہ کے میڈیکل سٹوڈنٹس کو پاکستان میں تعلیم کی پیشکش

Leave a Reply

Most Popular