Vinkmag ad

گرمی کی شدید لہر، سندھ کے ہسپتال ہائی الرٹ

ملک بھر میں گرمی کی شدید لہر جاری ہے۔ کسی بھی ہنگامی صورت حال سے نپٹنے کے لیے سندھ کے ہسپتال ہائی الرٹ پر ہیں۔ اس حوالے سے ہسپتالوں اور شہریوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی گئی ہے۔

ایڈوائزری میں تمام ہسپتالوں کو خصوصی ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ اس میں کہا گیا ہے کہ تمام ہسپتال ٹمپریچر معمول پر آنے تک طبی عملے کی چھٹیاں منسوخ کردیں۔ ضرورت کے مطابق طبی عملے میں اضافہ بھی کریں۔

ایڈوائزری میں ہدایت کی گئی ہے کہ ضروری طبی آلات مثلاً آئی وی ڈرپس، کینولا اور او آر ایس کی حامل ایمبولینسوں کو ہر وقت تیار رکھا جائے۔ یہ ایمبولینسز ہیٹ سٹروک کے مریضوں کو ہنگامی بنیادوں پر قریبی ہسپتالوں میں منتقل کریں گی۔ ہسپتال تمام ضروری ادویات کی دستیابی کو بھی یقینی بنائیں۔

ہسپتالوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ہیٹ سٹروک کے مریضوں کو فوری ہنگامی طبی امداد فراہم کریں۔ ان کے علاج کے لیے خصوصی وارڈز قائم کیے جائیں۔ ان وارڈز میں اے سی ، برف، جنریٹر اور پانی کا انتظام ہونا چاہیے۔ ہیٹ ویو سے نپٹنے کے لیے ضروری احتیاطی تدابیر کے بارے میں آگاہی سیشنز بھی منعقد کیے جائیں۔

ہیٹ سٹروک کے مریضوں کے لیے ہدایات

ایڈوائزری میں ہیٹ سٹروک کے مریضوں کے لیے بھی ہدایات دی گئی ہیں۔ اس کے مطابق مریض کو فوری طور پر کسی ٹھنڈی، سایہ دار یا ایئر کنڈیشنڈ جگہ پر لے جائیں۔ اس کے اضافی کپڑے اتار دیں۔ اسے ٹھنڈے پانی سے اسفنج کریں۔ اگر ممکن ہو تو اسے ٹھنڈے پانی کے ٹب میں بٹھا دیں۔ مریض کی بغلوں، گردن اور کمر پر آئس پیک یا ٹھنڈا، گیلا کپڑا رکھیں۔ اگر مریض ہوش میں ہو اور پینے کے قابل ہے تو اسے ٹھنڈا پانی پلائیں۔ اسے میٹھے یا کیفین والے مشروبات دینے سے گریز کریں۔

مریض کے لیے الیکٹرک فین یا ہاتھ میں پکڑا جانے والا پنکھا استعمال کریں۔ اس کے جسم کا درجہ حرارت چیک کرتے رہیں۔ اسے 38.3 سے 38.9 تک رکھنے کی کوشش کریں۔ متاثرہ شخص کو پرسکون رکھیں، اس کے ساتھ رہیں اور اس کی حالت کی مسلسل نگرانی کرتے رہیں۔

کراچی میں 21 سے 25 جون تک ہیٹ سٹروک کے 1718 کیسز رپورٹ ہوئے۔ اس کے علاوہ کچھ اموات بھی رپورٹ ہوئی ہیں۔ صوبائی محکمہ صحت کے مطابق سندھ کے ہسپتال ہائی الرٹ پر ہیں اور 24 گھنٹے کام کر رہے ہیں۔

Vinkmag ad

Read Previous

آنکھوں میں ککرے

Read Next

نرسوں کے لیے سعودی عرب میں ملازمتیں، کل سے انٹرویو شروع

Leave a Reply

Most Popular