Vinkmag ad

کے پی میں 8 لاکھ بچوں کے لیے پیٹ کے کیڑوں کی دوا

کے پی میں 8 لاکھ سے زائد بچوں کو پیٹ کے کیڑوں کی دوا پلائی جائے گی۔ اس کا فیصلہ ڈی وارمنگ انیشیٹو کی سٹیئرنگ کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا۔

اس سے قبل تقریباً 12 ملین بچوں کو یہ دوا فراہم کی جا چکی ہے۔ اس سال پریکٹیشنرز کے لیے تربیت کا آغاز ستمبر میں ہوگا۔ اس سے اگلے ماہ یہ مہم شروع کی جائے گی۔ دوا صوبے کے 22 اضلاع میں 5 سے 14 سال کے بچوں کو پلائی جائے گی۔ ہدف میں سرکاری اور نجی، دونوں سکولوں کے بچے شامل ہیں۔

ڈی وارمنگ پروگرام کا مقصد بچوں میں کیڑے کے انفیکشن کا مقابلہ کرنا ہے۔ اس کے لیے ہر سال 40,000 اساتذہ اور دیگر عملے کو متحرک کیا جاتا ہے۔ 2022 میں اس کے تحت 50 لاکھ بچوں کو دوا پلائی گئی۔ 2021 میں 3.8 ملین اور 2019 میں 2.7 ملین بچوں کو علاج فراہم کیا گیا۔

بچوں میں پیٹ سے متعلق بیماریاں زیادہ دیکھنے میں آتی ہیں۔ ان کا ایک سبب پیٹ کے کیڑے بھی ہیں۔ ان سے بچنے کے لیے بچوں کو چاہیے کہ ہاتھوں کی صفائی کا خیال رکھیں۔ کھیلنے اور واش روم جانے کے بعد اور کھانے سے قبل صابن سے ہاتھ ضرور دھوئیں۔ مائیں بچوں کو کھانا دینے سے قبل اپنے ہاتھ اچھی طرح سے دھوئیں۔ اس کے علاوہ پھلوں اور سبزیوں کو بھی اچھی طرح سے دھوئیں۔

دیکھا گیا ہے کہ بعض والدین بچوں کو پیٹ کے کیڑوں کی دوا پلانے سے انکار کر دیتے ہیں۔ پیٹ کےکیڑے بچوں میں غذائیت کی کمی کا باعث بن سکتے ہیں۔ اس لیے اگر بچوں کے سکول میں ایسی مہم چلے تو عملے سے پورا تعاون کریں۔

Vinkmag ad

Read Previous

بجٹ میں صحت کے لیے 27 ارب روپے مختص

Read Next

Compliance to the treatment can cure Tuberculosis

Leave a Reply

Most Popular