چکر کیوں آتے ہیں

بعض لوگ عام حالات میں ٹھیک ٹھاک ہوتے ہیں لیکن جوں ہی ایک سے دوسری پوزیشن میں جاتے ہیں تو انہیں چکر آنے لگتے ہیں۔ مگر یہ چکر کیوں آتے ہیں؟ دراصل سر چکرانے کی مختلف وجوہات ہو سکتی ہیں۔ ان میں سے ایک وجہ کان کے اندرونی حصے میں جراثیم سے ہونے والی بیماریاں ہیں۔

اندرونی کان اور دماغ کی رسولی، گردن کے مہروں کی بیماری اور گردوں پر اثر انداز ہونے والی ادویات بھی اس کا سبب بن سکتی ہیں۔سر اور گردن کو جھٹکا لگنے سے بھی چکر آنا شروع ہو سکتے ہیں۔

ایسی حالت میں متاثرہ شخص سخت گھبرایا ہوا یا حواس باختہ محسوس ہوتا ہے۔ وہ کھڑا نہیں ہو سکتا اور نہ ہی ٹھیک طریقے سے بیٹھ پاتا ہے۔ وہ بار بار نیچے گرتا ہے یا لیٹنے کی کوشش کرتا ہے۔اسے دھندلا نظر آتا ہے اور متلی بھی ہونے لگتی ہے ۔

چکر آنے کی وجہ کیسے معلوم ہوتی ہے

چکر کیوں آتے ہیں، یہ جاننے کے لئے کان، ناک اور گلے کے ماہر کو چیک کروانا چاہئے۔ وہ کان کے معائنے کے ساتھ خون کے ٹیسٹ اور آنکھوں کی حرکت کو چیک کرتے ہیں۔ اگر ضروری ہو تو مزید ٹیسٹ بشمول ایکسرے، سی ٹی سکین اور ایم آر آئی بھی تجویز کیے جاتے ہیں۔

معائنے کے دوران اگر کوئی پیچیدگی ہو تو مریض کو ضرورت کے مطابق مختلف ماہرین کے پاس بھیجا جاتا ہے۔ ان میں آرتھوپیڈک سرجن، آنکھوں کے سپیشلسٹ، جنرل فزیشن یا نیورو سرجن وغیرہ شامل ہیں۔

علاج کیا ہے

اگر کسی شخص کو بہت زیادہ چکر آنے کا مسئلہ ہو تو وہ اپنا مکمل معائنہ کروائے۔ اگر یہ اچانک اور شدت کے ساتھ شروع ہوئے ہوں اور ان کے ساتھ متلی اور قے بھی ہو تو مریض کو فوراً قریبی ہسپتال لے جائیں۔ اسے ابتدائی معائنے کے بعد چکروں کے لیے انجیکشن اور ڈرپ وغیرہ لگانے کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔

اس کا علاج بیماری کی نوعیت کے حساب سے کیا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ اسے شعبہ بحالی صحت سے تھیراپی کی ضرورت پڑ سکتی ہے جس میں سر، دھڑ اور آنکھوں کی ورزشیں کروائی جاتی ہیں۔

بچاؤ کی تدابیر

چکروں کا مسئلہ شروع ہونے سے پہلے ہی اس کی روک تھام کی جانی چاہیے۔ اس کے لئے ان ہدایات پر عمل کریں:

٭اچانک گھومتے ہوئے اور ویسے بھی سر اور گردن کو اچانک جھٹکا نہیں دینا چاہیے۔

٭خون میں چربی کی مقدار کو بڑھنے نہ دیا جائے۔

٭اندرونی کان ،دماغ اور اعصاب پر اثر انداز ہونے والی ادویات کے غیر ضروری استعمال سے خاص طور پر اجتناب کرنا چاہیے۔

٭بڑھتی عمر کے ساتھ چکروں کی علامات تواتر سے ہو سکتی ہیں۔ اس لیے مناسب ورزش، متوازن غذا اور اپنے وزن کو حد میں رکھنے کو یقینی بنائیں۔

Vinkmag ad

Read Previous

پھیپھڑوں میں پانی

Read Next

صحت مند دل کے لئے 11 سپر فوڈز

Leave a Reply

Most Popular