Vinkmag ad

فالج کا مریض، خیالات کے ذریعے کمپیوٹر کنٹرول

ٹیکنالوجی کے نت نئے کمالات سامنے آنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اب فالج کے شکار افراد کی زندگیاں بھی مفلوج نہیں رہیں گی۔ اس کی مدد سے فالج کا ایک مریض کمپیوٹر کو اپنے خیالات کے ذریعے کنٹرول کرتا ہے۔ یہ پیش رفت ایلون مسک کی نیورالنک برین چپ کی مدد سے ممکن ہوئی ہے۔

چپ استعمال کرنے والے پہلے خوش نصیب نولینڈ ارباؤ ہیں۔ انہوں نے اس ٹیکنالوجی کو ناقابل بیان حد تک حیرت انگیز قرار دیا ہے۔ اپنے ایک انٹرویو میں انہوں نے چپ کے استعمال کی وضاحت کی۔ ان کا جسم کندھوں سے نیچے بالکل مفلوج ہے۔ اس کے باوجود وہ حرکت کا صرف تصور کرتے ہیں اور چپ ماؤس پوائنٹر کو کنٹرول کرنے لگتی ہے۔

ابتدائی طور پر چپ امپلانٹ کرنے میں کچھ مسائل سامنے آئے جن پر قابو پا لیا گیا۔ اب نیورالنک دوسرے مریض میں چپ لگانے کے لیے تیار ہے۔ اس کے لیے فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن  سے منظوری حاصل کر لی گئی ہے۔ کمپنی یہ چپ اسی ماہ لگانے کا ارادہ رکھتی ہے۔ سال کے آخر تک وہ ایسے 10 مریضوں میں چپ لگائے گی۔ 1,000 سے زیادہ افراد نے اس کے لیے ناموں کا اندراج کرایا ہے۔

اعصابی امراض کے ماہر ڈاکٹر ٹام پِٹس کے مطابق اس کے لیے آئیڈیل امیدوار وہ ہیں جو ذہنی طور پر تندرست ہیں۔ اس کے علاوہ انہیں بہت واضح ہونا چاہیے کہ ٹیکنالوجی ان کے لیے کیا کر سکتی ہے اور کیا نہیں کر سکتی۔ ان کے مطابق الزائمرز یا برین کینسر کے مریضوں کے لیے اس کے فائدہ مند ہونے کا امکان کم ہے۔

فالج کے ایک مریض کا محض خیالات کے ذریعے کمپیوٹر کنٹرول کرنا بڑی پیش رفت ہے۔ اس سے علاج کے ضمن میں نئے راستے کھلیں گے۔

Vinkmag ad

Read Previous

گردے اور مثانے کے مسائل

Read Next

پاکستان میں کانگو وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 13 ہو گئی

Leave a Reply

Most Popular