چقندر کھائیں‘ خون بنائیں

2

چقندر کھائیں‘ خون بنائیں

چقندر شلجم سے مشابہہ ایک سبزی ہے جوگاڑھے سرخ رنگ کا ہوتا ہے۔ یہ مختلف ممالک میں گول‘چپٹی‘لمبی اور بیضوی شکلوں میں پایا جاتا ہے۔  ہمارے ہاں زیادہ تر گول اور بیضوی چقندر ہی کاشت کیا جاتا ہے ۔

گہرے سرخ رنگ کی یہ سبزی نہ صرف غذائیت سے بھرپور ہے بلکہ کئی امراض اور طبی کیفیات میں بھی بہت مفید ہے۔ ایران میں چقندر کا گرم رس بہت مقبول ہے۔ آئر لینڈ میں ساحلی علاقوں کے لوگ نہ صرف اس کے پتے بہت شوق سے کھاتے ہیں بلکہ  اسے ڈنٹھل سمیت پکا کر کھانے کا بھی رواج ہے۔ چقندر کھانے سے فاسد مادے قدرتی طور پر جسم سے خارج ہوجاتے ہیں۔ اس کا جوس بھی مفید ہے۔ خون کی کمی کے شکار مریضوں میں قوتِ مدافعت کو بھی بحال کرتا ہے۔ اس کی مناسب خوراک سے مندرجہ ذیل فوائد حاصل کئے جاسکتے ہیں

زہریلے مادوں کا اخراج

انسانی جسم کو مسلسل آلودگی،بیکٹیریا اور دیگر ٹاکسنز کا سامنا رہتاہے۔ جنہیں جسم سے نکالنے کے لئے جگر میں ایک قدرتی نظام موجودہے۔ چقندر اس نظام کو تقویت بخشتا ہے اور جسم سے ان زہریلے مادوں کو نکالنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

قبض سے نجات

چقندر کھانے سے آنتوں میں تحریک ہو کر اجابت آسانی سے وقوع پذیرہوتی ہے۔ اسے سلاد کی طرح یا پکا کرروزانہ کھایاجائے توقبض نہیں رہتا۔ پرانے قبض کےشکار افراد کو چاہئے کہ روزانہ رات کو سوتے وقت چقندر کا جوشاندہ ایک گلاس ضرور پئیں۔ اس میں فائبر کی بھرپور مقدار کی وجہ سے قبض ہمیشہ ہمیشہ کے لئے جاتا رہے گا۔

صاف اور نکھرا چہرہ

چقندر کا جوس چہر ے کے داغوں اور چھائیوں کو دورکرتا ہے۔ ایک چقندرکاٹ کر پانی میں ابال لیں۔ پھریہ پانی روئی پر لگا کر داغوں پر اچھی طرح لگائیے اورپانچ سات منٹ بعد منہ دھولیجئے۔ چند روز تک ایسا کرنے سے دھبے کم ہوجائیں گے۔ اگر چہرہ کی جلد زیادہ خراب ہو توچقندر پتوں سمیت ابالیں اور اس کے پانی سے جلد کو دن میں دوبار دھوئیں۔ اس سے جلد میں نہ صرف بہتری آئے گی بلکہ کیل مہاسے اورپھنسیاں بھی دور ہوجائیں گی۔

صحت مند دماغ

چقندر میں موجود نائٹریٹس  ہمارے جسم میں جاکر ٹائٹرک ایسڈبناتے ہیں۔  یہ خون کی نالیوں کو کشادہ کرنے میں مدد دیتا ہے۔ اس کے نتیجے میں ہمارے دل و دماغ کو آکسیجن سے بھرپور خون مہیا ہوتا ہے۔ یوں نہ صرف دماغ تازہ دم رہتا ہے بلکہ ذہنی تناؤ کا بھی کم شکار ہوتا ہے۔

ہائی بلڈ پریشر

چقندر کا جوس ہائی بلڈ پریشر ‘ شریانوں کی بندش‘ دل کی تکالیف اور پھولی ہوئی وریدوں کا اچھا علاج ہے۔ جن لوگوں کو بلڈپریشرکی شکایت ہو‘انہیں چاہئے کہ اس کا جوس خاص طور پر استعمال کریں۔ کچھ لوگ گاجر کے جوس میں چقندر کا جوس ملا کر پیتے ہیں۔ یہ بھی فائدہ مند ہے۔ دل کے مریضوں کے لئے اسے نہایت مفید پایا گیا ہے۔

خشکی

بالوں کی صحت کیلئے چقندر بہت فائدہ مند ہے۔  سر میں خشکی دعر کرنے کے لئےایک عدد چقندر چھلکے سمیت کاٹیں اور پتوں سمیت پانی میں ابال لیں۔ پھراس پانی کو اچھی طرح سر میں ملیں ۔ ہفتے میں دوبار یہ عمل کرنے سے خشکی ختم ہوجائے گی۔ بالوں میں خشکی کی اصل وجہ سر کی جلد کا چکنا ہوجانا ہے۔ چقندر کے پتوں میں فولک ایسڈ کی وافر مقدار پائی جاتی ہے جو سر میں موجود خشکی کو ختم کرنے میں مدد گار ثابت ہوتی ہے۔

دل ‘ذیابیطس کے مریض

دل اور ذیابیطس کے مریضوں کے لئے چقندر کسی نعمت سے کم نہیں ۔اس میں نہ صرف فائبرکی بھرپور مقدار ہے بلکہ گلائی کولک ایسڈ کی مقدار بہت کم ہوتی ہے۔ یوں اس میں موجود فائبر جسم کے زائد گلوکوز اور کولیسٹرول کو جسم سے خارج کرتا ہے۔  یہ دل اور ذیابیطس کے مریضوں کے لئے آسانی کاباعث بنتا ہے۔

خون بنانے میں مددگار

اس میں موجود اجزاء فولک ایسڈ اور وٹامن سی خون بنانے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔اس لئے خون کی کمی کے شکار افراد اسے اپنی روزمرہ کی سلاد میں ضرور شامل کریں۔ کوشش کریں کہ اسے کچا کھائیں تاکہ اس سے بھرپور غذائیت حاصل کر سکیں۔

آئرن کی کمی

جسم میں آئرن کی کمی والے افراد اسے کھا سکتے ہیں۔ اس میں موجود وٹامن سی ان کے جسم میں آئرن کو جذب کرنے میں مددگار ثابت ہوتی ہے۔

وزن کم کرنے میں مفید

 چقندر میں کیلوریز کی بہت کم مقدار پائی جاتی ہے جو وزن کو برقرار یا اسے کم کرنے میں مفید ہے۔

گہرے رنگ والے پھل اور سبزیاں ہمیشہ کچی کھائیں کیونکہ ان میں اینٹی آکسیڈینٹس کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے۔ انہیں پکانے یا زیادہ ابالنے سے بھی گریز کریں ورنہ ان میں موجود بہت سے غذائی اجزاء ضائع ہوجائیں گے۔اس کا ایک اور فائدہ یہ ہے کہ یہ جسم میں جمع شدہ فالتو مادوں کو جسم سے خارج کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔
اس کا رنگ دیر پا ہوتا ہے لہٰذا کاٹتے وقت دستانے یا پلاسٹک کے لفافے سے ہاتھوں کو ضرور ڈھانپ لیجئے۔

Benefits of beetroot, weight loss, clear skin

0 0 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
Would love your thoughts, please comment.x
()
x