ٹائیفائیڈ سے بچاؤ

ٹائیفائیڈ سے بچاؤ

عالمی ادارۂ صحت کے مطابق دنیا بھرمیں ہرسال 11 سے 20 ملین افراد ٹائیفائیڈ کا شکارہوتے ہیں۔ ان میں سے 1 لاکھ 28  ہزارسے 1 لاکھ 61 ہزارافراد جان کی بازی ہارجاتے ہیں۔ یہ انفیکشن آلودہ اشیائے خورونوش کے استعمال سے متاثرہ افراد کی خون کی نالی اورآنتوں میں منتقل ہوتا ہے۔ شہروں میں بڑھتی ہوئی آبادی، صاف پانی کی کمی ، صفائی کا ناقص نظام اورآب و ہوا میں تبدیلی ٹائیفائیڈ کی بڑھتی ہوئی شرح کا بڑا سبب ہے۔ اس سے نپٹنے کے لئے

٭زیرزمین، دریا اورندیوں سے حاصل ہونے والے پانی کو استعمال کرنے سے قبل ایک منٹ ( پانی میں بلبلے بننے تک) ابال لیں۔

٭کھانے کوکبھی کھلا نہ چھوڑیں ورنہ مکھیاں اوردیگر کیڑے اسے آلودہ کر دیںگے۔

٭سبزیاں اورپھل استعمال کرنے سے قبل انہیں صاف پانی سے اچھی طرح دھوئیں۔ اگرچہ سبزیاں اورپھل چھلکے سمیت کھانا تجویزکیا جاتا ہے لیکن بہترہے کہ چھلکا ہمیشہ اتارکرکھائیں۔

٭باہر سے کھانا اسی صورت میں کھائیں جب اس کی صفائی کے حوالے سے مکمل طورپرمطمئن ہوں۔

٭کھلی جگہوں پررفع حاجت سے گریزکریں۔

٭اس بات کو یقینی بنائیں کہ کھانے کی اشیاء کو دھونے اورپکانے کے لئے استعمال ہونے والا پانی آلودہ نہ ہو۔

٭ہاتھوں کوبار بارخصوصاً کھانے سے پہلے، واش روم استعمال کرنے کے بعد اور جانوروں کو چھونے کے بعد ضروردھوئیں۔

٭ٹائیفائیڈ سے بچاؤ کی ویکسین لگوائیں۔

دورانِ علاج احتیاطیں

٭ٹائیفائیڈ کے مریض کھانا پکانے یا دوسروں کوپیش کرنے سے گریزکریں۔

٭گھرکے باقی افراد ٹائیفائیڈ کی ویکسین لگوائیں۔

٭اگرادویات کھانے کے باوجود حالت بہترنہ ہو توگھربیٹھ جانے کے بجائے ڈاکٹرکوصورت حال سے آگاہ کریں۔

typhoid prevention, vaccination, hand hygiene, clean water, precautionary measures during treatment

LEAVE YOUR COMMENTS