ہڈیوں کے بھربھرے پن سے کیسے بچیں

1

٭ڈاکٹر صاحبہ! میں نے اپنے خاندان کی بہت سی خواتین کو40 سال کی عمر کے بعد ہڈیوں کے بھربھرے پن کا شکارپایا ہے۔ خوراک اور صحت کے معاملے میں بے حد محتاط رویے کے باوجود یہ مسئلہ میری بڑی بہن کو بھی 42 سال کی عمر سے درپیش ہے۔ میں یہ جاننا چاہتی ہوں کہ ہم اپنی خوراک میں ایسی کیا تبدیلیاں لائیں جوہمیں عمرکے اس حصے میں اس مرض سے بچا سکیں؟
(زہرہ ربانی،درہ آدم خیل)

٭٭ ہڈیوںکی اچھی صحت کے لئے کیلشیم، وٹامن ڈی(جو کیلشیم کو جذب ہونے میں مدد دیتا ہے) اور مخصوص قسم کی ورزشیںبے حد ضروری ہیں۔ اس ضمن میں دیگر اہم غذائی اجزاء میں وٹامن سی، ای اورکے بھی شامل ہیں۔ ہڈیوں کا تقریباً 50 فی صد حجم پروٹین پر مشتمل ہوتا ہے‘ اس لئے روزانہ پروٹین کی ایک خاص مقدار لینا ان کی صحت پر مثبت اثر ڈالتا ہے‘ تاہم اس کی زیادتی ہڈیوں کے لئے موزوں نہیں۔ اس کے علاوہ کچھ منرلز مثلاً میگنیشیم،فاسفورس، سیلیکون، بورون، زنک، مینگانیز اور کاپر کی مناسب مقدار جسم میں موجود کیلشیم کو متوازن رکھنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔ ان غذائی اجزاء کے حصول اور اپنی ہڈیوں کو تندرست رکھنے کے لئے درج ذیل ہدایات پر عمل کریں:
٭ دودھ کا استعمال باقاعدگی سے کریں۔ اسے رات کو سونے سے پہلے پینا زیادہ فائدہ مند ہوتا ہے ۔ دودھ سے تیارکردہ اشیاء مثلاً دہی یا پنیر وغیرہ بھی فائدہ مند ہیں۔
٭چکن یا گوشت میں موجود ہڈیوں کو لیموں یا سرکے میں ڈال کرپانی میں ابال لیں۔ یوں ہڈیوں میں موجود کیلشیم پانی میں آجائے گا۔ اس سیرپ کوگریوی یا سوپ وغیرہ میں استعمال کر کے ذائقہ اور صحت‘ دونوں کو بڑھایا جا سکتا ہے۔
٭ ہرے پتے والی سبزیاں، سالم غلہ (whole grain)، تل کے تیل اور مچھلی کو اپنی غذاء کا حصہ بنائیںتاکہ جسم کو ضروری غذائی اجزاء میسر آسکیں۔ اس کے علاوہ سلفر سے بھرپور اشیاء مثلاً انڈے، لہسن اور پیاز کا استعمال بھی ہڈیوں کے لئے مفید ہے۔
٭ روزانہ دن کو کسی بھی وقت 15 منٹ کے لئے سورج کی روشنی میں براہِ راست بیٹھنا وٹامن ڈی کی فراہمی میں بہت مدد دیتا ہے۔
٭ خود کو جسمانی طور پر متحرک رکھیںاور ورزش کو اپنامعمول بنائیں۔ آپ کو بتاتی چلوں کہ تیز چلناہڈیوں کے لئے بہترین ورزش ہے۔
٭کھانوں میں ضروری غذائی اجزاء کو شامل کرنے کے ساتھ ساتھ ذہنی دباؤ سے بچنا بھی ضروری ہے کیونکہ یہ بھی کیلشیم کے ضیاع کا باعث بنتا ہے۔
٭ کاربونیٹڈ سافٹ ڈرنکس، سگریٹ نوشی، زیادہ چینی یا نمک کے استعمال سے بھی اجتناب کریں۔

Leave a Reply

Leave a Reply

  Subscribe  
Notify of