ذیابیطس اور پورشن کنٹرول

5

ذیابیطس اور پورشن کنٹرول


آج سے تقریباً 10 سال پہلے تک صورت حال یہ تھی کہ شوگر کے مریضوں کو ایک خاص قسم کا ڈائٹ پلان دے دیا جاتا تھا جس میں چند غذائیں عمر بھر کے لئے ان پر بند کر دی جاتی تھیں۔

مریضوں کو اس حوالے سے فائدہ تو ہوتا لیکن کچھ اہم غذائی اجزاء کی کمی کی وجہ سے انہیں کئی اور بیماریاں بھی لاحق ہو جاتیں۔ یوں اس پابندی کے  منفی اثرات کو دیکھتے ہوئے اورمیڈیکل سائنس کی نئی تحقیقات کی روشنی میں ماہرین اب اس نتیجے پر پہنچے کہ ذیابیطس کے مریضوں پر کھانے کی کوئی ایسی چیز مکمل طور پر بند نہیں ہونی چاہئے

جسے بالعموم صحت بخش سمجھا جاتا ہے‘تاہم اس کے تناسب کا خیال رکھناچاہئے جسے پورشن کنٹرول کہا جاتا ہے ۔اس سے مرادیہ ہے کہ اگرمرض ہونے سے پہلے وہ دن میں ایک آم کھاسکتے تھے تو اب پورے دن یا ہفتے میں اس کی ایک پھانک کھاسکتے ہیں ۔


کھانے کی پلیٹ کا ماڈل


شفا انٹرنیشنل فیصل آباد کی ماہر غذائیات عروج رؤف کے مطابق

 ذیابیطس کی غذائی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے کھانے کی پلیٹ کا ماڈل پیش کیا جاتا ہے ۔ایسی پلیٹ کا طریقہ یہ ہیں


ایک کھانے کی پلیٹ لیں اور اس کے نصف حصے میں ہرے پتوں والی سبزیاں اور سلادرکھ دیں۔ پلیٹ کا ایک چوتھائی حصہ ایسی غذا سے بھریں جس میں پروٹین کی مقدار زیادہ ہو۔ پلیٹ کے باقی ایک چوتھائی حصے میں ایسی غذائیں رکھیں جن میں کاربوہائیڈریٹس موجود ہوں ۔ پھلوں اور دودھ سے بنی اشیاء کی تھوڑی مقدار بھی اس میں شامل کی جاسکتی ہے ۔


نمک کا استعمال چائے کے آدھے سے تین چوتھائی چمچ روزانہ سے بڑھنے نہ پائے۔  چائینز نمک سے پرہیز کریں‘ اس لئے کہ اسے انسانی صحت کے لئے مضر پایا گیا ہے ۔  

دیکھا گیا ہے کہ اگر کسی کا انرجی لیول کم ہو گیا ہو تو ہنگامی طور پر اسے کولا مشروب دے دیا جاتا ہے۔ یہ رویہ درست نہیں‘ اس لئے کہ اس کے اندر کیفین ہوتی ہے جوشوگر کے مریضوں کے لئے نقصان دہ ہے۔

اسی طرح ڈبا بند مشروبات بھی ان کے شوگر لیول کو بڑھا دیں گے۔ان کی بجائے ایک کھجور کھانا‘یاایک چائے کا چمچ شہد ایک کپ پانی میں ملا کر پینابہتر ہے۔

Honey, Cola drinks, high sugar level, diabetic patient, Diabetic plate model

 

0 0 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
Would love your thoughts, please comment.x
()
x