آنکھ کی پتلی کا زخم

آنکھ کی پتلی کا زخم

انسانی جسم میں موجود تمام اعضاء کوفعال رہنے کے لئے آکسیجن کی ضرورت ہوتی ہے جو خون سے حاصل ہوتی ہے. اس کے برعکس جسم کا ایک حصہ ایسا بھی ہے جو کام کے لئے خون کے بجائے ہوا سے آکسیجن حاصل کرتا ہے۔ یہ شفاف حصہ پتلی ہے جس کے ذمے آنکھوں کو گردووغبارسے محفوظ رکھنے کے علاوہ دیکھنے میں مدد دینا بھی ہے۔

گردو غبار، دھات کے ذرات، کاغذ کا ٹکڑا یا کوئی نوکیلی شے لگنے سے پتلی پرکٹ لگ جاتا ہے یا خراش آجاتی ہے۔ اس کی علامات میں آنکھوں میں درد ہونا، ان میں کچھ اٹکا ہوا محسوس ہونا، نظردھندلا جانا، روشنی خصوصاً تیزروشنی سے حساسیت پیدا ہونا، آنکھیں لال ہوجانا اوران کے گرد پٹھوں کا کھچ جانا قابل ذکر ہیں۔

کیا کریں، کیا نہیں

اس صورت حال کا سامنا ہو توان ہدایات پرعمل کریں

٭کانٹیکٹ لینزپہنے ہوئے ہوں تو انہیں فوری طورپراتار دیں۔

٭آنکھ کو صاف پانی سے دھوئیں۔

٭باربار پلکیں جھپکائیں یا اوپری پپوٹے کو نرمی سے کھینچ کر نچلے پپوٹے کے اوپرلائیں۔ یہ عمل آنکھوں میں اٹکی بیرونی اشیاء کوخارج ہونے میں مدد دے گا۔

٭آنسو نہ بن رہے ہوں تو آنکھوں کی صفائی کے لئے مصنوعی آنسواستعمال کریں۔

٭روشنی سے حساسیت کم کرنے کے لئے دھوپ کے چشمے پہنیں۔

٭زخمی آنکھ کو ملنے سے گریزکریں۔

٭اگرمحسوس ہو کہ کوئی چیزآنکھ کے ڈیلے کی گہرائی میں گئی ہے تو اسے خود سے نکالنے کی کوشش نہ کریں۔

٭آنکھوں کی صفائی کے لئے روئی، ٹویزریا اس طرح کے دیگر آلات استعمال نہ کریں۔

بچاؤ کی تدابیر

٭پودوں اورگھاس کی کاٹ چھانٹ کے دوران یا دیگرمشینوں کے ساتھ کام کرتے ہوئے حفاظتی عینکیں پہنیں۔

٭میک اپ برش اوربالوں کوگھنگھریالے کرنے والے آلات استعمال کرتے ہوئے محتاط رہیں۔

٭کانٹیکٹ لینزکی صفائی ستھرائی کا خاص خیال رکھیں۔

٭کانٹیکٹ لینزپہن کر سونے سے گریزکریں۔

ڈاکٹر سے کب رابطہ کریں

یہ مسئلہ عموماً ایک یا زیادہ سے زیادہ دو دن تک خود ہی ٹھیک ہو جاتا ہے۔ اگر ایسا نہ ہو تو اسے نظرانداز نہیں کرنا چاہئے ورنہ آنکھ کی پتلی میں انفیکشن اورنتیجتاً السربن سکتے ہیں۔ اگر یہ ٹھیک ہونے کے کچھ دنوں بعد پھرسے ہو جائے یا ذیل میں بیان کردہ مسائل پیش آئیں تو فوری طورپرماہرامراض چشم سے رابطہ کریں۔

٭آنکھیں بند کرنے میں دقت ہو۔

٭دیکھ بھال کرتے ہوئے 24 گھنٹے گزرجائیں مگر درد کم نہ ہو یا مزید بڑھتا جائے۔

٭آنکھ سے پیپ کی طرح کا مادہ خارج ہو۔

٭آہستہ آہستہ بصارت ختم ہوتی جا رہی ہو۔

Corneal abrasion, first aid for corneal abrasion, when to consult doctor, alarming symptoms

LEAVE YOUR COMMENTS