بخار کی عام اقسام

2

بخار کی عام اقسام

بخار کے انداز سے اس کاممکنہ سبب معلوم ہو جاتا ہے جس کے مطابق علاج کیاجاتا ہے۔ ہمارے ہاں زیادہ عام بخار درج ذیل ہیں

ملیریا

اس کا وائرس ایک خاص قسم کے مچھرکے ذریعے پھیلتا ہے۔ جب وہ ملیریا کے شکار کسی شخص کو کاٹتا ہے تو اس کا وائرس اس مچھر میں منتقل ہوجاتا ہے۔ جب یہی مچھر کسی صحت مند آدمی کو کاٹتا ہے تووائرس اس تک منتقل ہوجاتا ہے اور اسے بخار ہوجاتا ہے۔ اس بخارمیں اچانک ٹمپریچر بڑھتا ہے اور پھریک دم پسینے آنا شروع ہو جاتے ہیں۔ ملیریا ہر دوسرے یا تیسرے دن ہو سکتا ہے۔ روزانہ ایک خاص وقت پر بخار ہونے کی وجہ یہ ہے کہ جراثیم اسی وقت تقسیم در تقسیم ہوتے اور پھلتے پھولتے ہیں۔

ٹائیفائیڈ

اس کا وائرس آنتوں سے خون میں شامل ہوتا ہے۔ یہ بخار اچانک نہیں ہوتابلکہ آہستہ آہستہ بڑھتا ہے اور پھر یکساں رہتا ہے۔ مثلاً پہلے دن مریض کو 99ڈگری فارن ہائیٹ کا بخار ہو گا‘ پھروہ بتدریج 100‘101 اور102 ڈگری تک پہنچ جائے گااور پھر اس پر مسلسل رہے گا۔ یہ سردی اور پسینے والا بخار نہیں ہے ۔ اس لئے کہ یہ بتدریج بڑھتا ہے۔

گردن توڑ بخار

دماغ کی حفاظت کیلئے اس کے گرد ایک پردہ ہوتا ہے جس کے اندر مائع بھراہوتا ہے۔ یہ پردہ سرسے شروع ہو کرگردن سے ہوتے ہوئے ریڑھ کی ہڈی تک آتا ہے۔ اس کا مقصد ان اعضاء کوچوٹ کی صورت میں محفوظ رکھنا ہے۔ اگر اس مائع میں انفیکشن ہو جائے تو پردہ سوج کر موٹا ہو جاتا ہے۔ اس طرح سر‘ گردن اور کمر پر دبائو پڑتا ہے جس سے ہمیں ان حصوں میں درد محسوس ہوتا ہے۔ لوگ چونکہ سر اور کمر درد سے مانوس ہیں لہٰذا وہ اس پر غور نہیں کرتے لیکن گرد ن میں درد پر فوراً متوجہ ہوتے ہیں۔ اس لئے یہ اسی علامت یعنی گردن توڑ بخار کے نام سے جانا جاتا ہے۔ دماغ کے گرد پردے میں سوجن کی وجہ سے دماغ پر دبائوکبھی کبھی زندگی کیلئے خطرناک بھی ثابت ہو سکتا ہے۔

لمفوما

ایک مرض لمفومابھی ہے جو جسم کے مخصوص دفاعی خلیوں لمفو سائیٹس کا کینسر ہے۔اس کا بخار ہفتے میں ایک دفعہ ہوتا ہے۔

Fever, types, typhoid, lymphoma, malaria

0 0 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
Would love your thoughts, please comment.x
()
x